پاکستان کے حالات بہتر ہونا شروع! عمران خان کامیاب، عالمی جریدے نے پاکستان کا مستقبل روش قرار دےدیا، قوم کے لیے خوشخبری

لاہور (ویب ڈیسک ) عالمی جریدے نے پاکستان کا معاشی مستقبل روشن قرار دے دیا، خلیج ٹائمز کا کہنا ہے کہ پاکستان میں بیرونی سرمایہ کاری سے معاشی استحکام آئے گا، ٹیکس فری اور شرح سود میں کمی سرمایہ کاری کیلئےپرکشش ہے، عالمی سطح پر معاشی خراب صورتحال کے باوجود پاکستان میں حالات بہتر ہوئے۔عالمی جریدے خلیج ٹائمز نے اپنی رپورٹ میں معاشی محاذ پر پاکستان کے مستقبل کو روشن قرار دیتے ہوئے لکھا

کہ پاکستان میں بیرونی سرمایہ کاری سے معاشی استحکام آئے گا۔پاکستان کے معاشی اعشاریوں میں مسلسل نمایاں بہتری کا سلسلہ جاری ہے۔ معاشی ماہرین اور سفارتکار بھی پاکستان سے متعلق اچھی رائے دے ہیں ۔ عمران خان کی حکومت نے معاشی سرگرمیوں کیلئے بڑے پالیسی اقدامات اٹھائے ۔ جن کی وجہ سے عالمی سطح پر معاشی صوتحال کی رفتار کم ہونے کے باوجود پاکستان میں معاشی حالات بہتر ہوئے ہیں ۔ جس سے ثابت ہوتا ہے کہ پاکستان معاشی استحکام کیلئے زبردست اقدامات اٹھا رہا ہے۔عالمی جریدے کے مطابق موڈیز نے بھی معاشی آؤٹ لک کو مستحکم قرار دیا ہے ۔ پاکستان خصوصی معاشی زونز کے قیام پر تیزی سے کام کر رہا ہے۔ ڈیمز تعمیر سمیت سی پیک جیسے معاشی منصوبوں پر تیزی سے کام جاری ہے۔ شرح سود میں نمایاں کمی اور ٹیکس فری سرمایہ کاری کیلئے سرمایہ کاروں کیلئے پاکستان بہترین انتخاب ہوسکتا ہے۔دوسری جانب عالمی ریٹنگ ایجنسی فیچ کا کہنا ہے کہ پاکستان میں مالی خسارہ کم اور ترقی کی رفتار بہتر ہورہی ہے ، رواں مالی سال شرح نمو 1عشاریہ 2 فیصد رہنے کی توقع ہےفیچ ریٹنگ کی جانب سے جاری کی گئی پاکستانی معیشت پر رپورٹ کے مطابق

رواں مالی سال پاکستان کا جاری کھاتوں کا خسارہ 1٫7فی صد رہنے کی توقع ہے ۔ کرونا کے باعث عالمی معاشی سست روی کی وجہ سے پاکستان کی ترسیلات میں 10فی صد کی کمی ہوگی ۔ فیچ کا کہنا ہے کہ مالی سال 2021 میں پاکستان 10 ارب30 کروڑ ڈالر کے بیرونی قرضے ا دا کریگی ۔ جبکہ مالی سال 2022 میں حکومت کو 8ارب 90کروڑ ڈالر کے بیرونی قرضے ادا کرنے ہیں ۔ فیچ کا کہنا ہے کہ کرونا کے باعث مالی سال 2021 میں پاکستان کا مالی خسارہ 8٫2فی صد رہے گا ۔ تاہم پاکستان میں ترقی کی رفتار بتتدریج بہتر ہو رہی ہے ۔ رواں مالی سال پاکستان پاکستان کی شرح نمو 1عشاریہ 2 فی صد رہنے کی توقع ہے جو گزشتہ مالی سال منفی عشاریہ 4فیصد تھی ۔ اسی طرح آج وزیراعظم عمران خان نے ٹویٹر پر اپنے ٹویٹ میں پاکستانی معیشت کیلئے ایک اور خوشخبری دیتے ہوئے کہا کہ جولائی 2020 میں سمندر پار پاکستانیوں کیجانب سے بھجوائی جانے والی ترسیلاتِ زر 2768 ملین ڈالرز تک پہنچ گئیں جو ملکی تاریخ میں 1 ماہ میں بھجوایا جانے والا سب سے زیادہ سرمایہ ہے ۔ انہوں نے کہا کہ یہ ترسیلاتِ زر جون 2020 کی نسبت 12.2 فیصد جبکہ جولائی 2019 کی نسبت 36.5 فیصد زیادہ ہیں ۔

Sharing is caring!

Comments are closed.