ایک رات جب پاکستان کی انتہائی معروف اداکارہ زیبا بختیار کو شہباز شریف نے ان کے گھر سے پِک کیا اور موٹر وے پر آئے تو پاک فوج کے ایک۔۔۔۔

اسلام آباد(نیوز ڈیسک) نامور اداکارہ زیبا بختیار کی پہلی شادی سلمان ویلانی نامی شخص سے ہوئی تھی جو زیادہ دیر تک نہ چل سکی اور طلاق ہوگئی۔ اس کے بعد زیبا نے دوسری شادی کوئٹہ کے ایک گمنام شخص سے کی جس سے زیبا کی ایک بیٹی پیدا ہوئی جس کا نام بوبی رکھا گیا۔

اور بوبی کو زیبا کی بہن نے گود لے لیا۔نامعلوم شخص سے طلاق کے بعد زیبا بختیار نے تیسری شادی جاوید جعفری سے کی جو زیادہ تک نہ چل سکی اور نامعلوم وجوہات کی بنا پر طلاق ہوگئی لیکن زیبا اس شادی سے متعلق حقائق کو تسلیم نہیں کررہی ہے۔ دوسری طرف جاوید جعفری نے شادی کا سرٹیفکیٹ (نکاح نامہ) بھارتی میڈیا کے سامنے پیش کردیا جو ایک بھارتی عدالت نے جاری کیا تھا۔ جاوید جعفری سے علیحدگی کے بعد زیبا نے عدنان سمیع سے شادی کرلی۔لیکن 1997 میں یہ شادی بھی ختم ہوگئی۔ عدنان سے ایک بیٹا اذان سمیع پیدا ہوا۔ بعض ذرائع یہ بھی کہتے ہیں کہ عدنان سمیع سے علیحدگی کے بعد زیبا نے سہیل لغاری نامی شخص سے بھی شادی کی تھی۔ ایسی خاتون کی ازدواجی زندگی کو دیکھتے ہوئے عدنان سے شکوہ نہیں کیا جا سکتا کہ عدنان کے زیبا جیسی خوبصورت لڑکی کو چھوڑ کر غیرملکی لڑکی سے شادی کیوں کی یہ الگ بات ہے کہ وہ غیرملکی بیوی عدنان کو یہ کہہ کر چھوڑ کر جاچکی ہے کہ جو شخص اپنے ملک کو چھوڑ کر جاچکا ہے جو شخص اپنے ملک کو چھوڑ سکتا ہے وہ اپنی بیوی کو بھی کسی وقت چھوڑ کر جاسکتا ہے۔نواز شریف اور شہباز شریف کے پہلے اور دوسرے دور حکومت میں معاملات اس وقت خراب ہونا شروع ہوئے جب اداکاراؤں اور ماڈل گزلز نے اخلاقیات کا لحاظ نہ کرتے ہوئے دونوں بھائیوں کو وقت دینا شروع کردیا۔ اگر کوئی ایک مخصوص اداکارہ اس ہفتے بڑے میاں صاحب سے ملاقات کرتی تو اگلے ہفتے وہ میاں شہباز شریف کے ساتھ ہوتی میاں نوازشریف اور میاں شہباز شریف دونوں کو علم تھا کہ وہ انٹیلی جینس ایجنسیوں کی نظروں میں ہیں لیکن اس کے بادجود دونوں بھائی احتیاط کرتے رہے ۔12 اکتوبر کو جب فوج نے ٹیک اور کیا اور پرائم منسٹر ہائوس کی تلاشی لی گئی تو برآمد ہونے والی دیگر اشیاء کے ساتھ عیاشی کے سامان کی طویل فہرست بھی شامل تھی جس میں راتوں کو رنگین بنانے کے لئے خصوصی بستر فحاش فلمیں مشترکہ مخصوص لمحات کو طویل کرنے والی مشہور معاروف گولیاں ویاگرا کی بڑی تعداد شامل تھی میاں صاحب نے پرائم منسٹر ہائوس کو باقاعدہ ایک شاہی دربار کی شکل دے رکھی تھی جہاں “حضور عالم پناہ ” کی طبیعت خوش کرنے کے لئے بھانڈ موسیقی سے لطف اندوز ہونے کے لئے گلوکارائوں کی محافل سجا کرتی تھیں نواز شریف اپنے ان مصاحبین کی دل کھول کر امداد کیا کرتے تھے۔

Sharing is caring!

Comments are closed.