جہانگیر ترین بھی چُپ نہ رہے، گڑے مُردے اکھاڑ دیے

اسلام آباد (ویب ڈیسک) تانیہ ایدرس کے استعفے کے بعد جہانگیر ترین بھی چُپ نہ رہے، گڑے مُردے اکھاڑ دیے۔ چند روز قبل معاون خصوصی وزیراعظم برائے ڈیجیٹل پاکستان تانیہ ایدرس نے اپنے عہدے سے استعفیٰ دے ڈالا تھا۔اچانک ان کے اس اقدام کو بڑا حیران کن تصور کیا گیا ۔

لیکن بعد ازاں دعویٰ کیا گیا کہ اس استعفے کی وجہ تانیہ ایدروس کی وہ این جی او تھی جس کے بورڈز آف گورنرز میں جہانگیر خان ترین بھی شامل تھے۔ سینئر صحافی رئوف کلاسرا نے دعویٰ کیا ہے کہ جہانگیر ترین نے لندن سے اس حوالے سے ان سے رابطہ کیا ہے اور انھیں اپنا موقف دیا ہے۔ جہانگیر ترین نے بتایا ہے کہ یہ ڈیجیٹل پاکستان کا منصوبہ تھا۔جب ڈیجیٹل پاکستان کا منصوبہ عمران خان کو پیش کیا گیا تو انہیں یہ بہت پسند آیا ، اس منصوبے میں دنیا بھر سے آئی ٹی ایکسپرٹس کو پاکستان لاکر ڈیجیٹل دنیا میں قدم رکھا جانا تھا لیکن اس میں سب سے بڑی رکاوٹ یہ تھی کہ ان ایکسپرٹس کو دینے کیلئے بھاری تنخواہیں قومی خزانے سے نہیں نکالی جاسکتی تھیں، اسی لیے ایک فاؤنڈیشن بنائی گئی جس میں بل گیٹس فاو¿نڈیشن سے پیسے آنے تھے اور ان پیسوں سے ڈیجیٹل پاکستان منصوبے کو عملی جامہ پہنایا جا نا تھا۔رؤف کلاسرا کے مطابق جہانگیر خان ترین نے اس فاو¿نڈیشن کے غیر سیاسی ہونے مگر اس سے جہانگیر خان ترین اور تانیہ ادروس کے نام جڑے ہونے سے متعلق سوال کے جواب میں کہا کہ اس منصوبے سے میرا کسی قسم کا ذاتی مفاد جڑا ہوا نہیں تھا ، میری یہ غلطی تھی مجھے اپنا نام اس فاو¿نڈیشن سے نہیں جوڑنا چاہیے تھا۔میرے خلاف پارٹی میں ایک مضبوط لابی کام کررہی ہے وہ ہر معاملے میں عمران خان صاحب کے کان میرے خلاف بھرتے ہیں، لیکن میں تین ماہ پہلے اس فاؤنڈیشن سے بھی مستعفیٰ ہوچکا ہوں۔

Sharing is caring!

Comments are closed.