ورلڈ کپ ٹرافی ایک فاتح ٹیمیں دو قرار، کرکٹ کی تاریخ کی بڑی خبر آگئی

لندن (نیوز ڈیسک) کرکٹ ورلڈ کپ کا فائنل میچ ٹائی ہونے کے بعد اور پھر سپر اوور بھی ٹائی ہونے کے بعد انگلینڈ کی کرکٹ ٹیم کو میچ میں زیادہ باؤنڈریز لگانے پر فاتح قرار دے دیا گیا تھا۔ انگلینڈ کی ٹیم نے اس میچ میں 26 اور نیوزی لینڈ کی ٹیم نے 17 باؤنڈریز لگائی تھی۔ دوسری طرف اب


نیوزی لینڈ کرکٹ ٹیم کے ہیڈ کوچ گیری سٹیڈ نے کہا ہے کہ جب کرکٹ ورلڈ کپ فائنل میں انگلینڈ اور نیوزی لینڈ کی ٹیموں میں پچاس اوورز کے میچ کے ٹائی ہونے کے بعد سپر اوورز میں بھی سکور برابر ہوگیا تھا تو بہتر آپشن یہ تھا کہ دونوں ٹیموں کو مشترکہ طور پر فاتح قرار دے دیا جاتا۔ یاد رہے کہ نیوزی لینڈ ٹیم کو سپر اوور کے بھی ٹائی ہونے کے بعد انگلینڈ کی جانب سے زیادہ باﺅنڈریز مارنے پر اسے فاتح قرار دے دیا گیا۔ کیوی ہیڈ کوچ گیری سٹیڈ نے آئی سی سی کو مشورہ دیا کہ مستقبل میں فائنل میچ میں اگر 100 اوورز میں بھی فیصلہ نہ ہو سکے تو دونوں فائنلسٹ ٹیموں کو مشترکہ طور پر فاتح قرار دیا جائے۔انہوں نے مزید کہا کہ بہت سی چیزوں کا دوبارہ جائزہ لینا چاہیے، جس کے لیے یہ صحیح وقت ہے، یہ بات سمجھ سے بالاتر ہے کہ پچاس اوورز کے کھیل کا فیصلہ ایک اوورپر کیسے کیا جا سکتا ہے؟۔ گیری سٹیڈ کے مطابق وہ اس بات پر بھی حیران تھے کہ جن قوانین کے مطابق 7 ہفتے ورلڈ کپ کھیلا جاتا رہا، تو آخری دن کے لیے نیا قانون کیوں بنا؟ قانون جو بھی ہیں ہمیں ان کے مطابق چلنا پڑتا ہے، تاہم امید ہے بحث جلد ختم ہو جائے گی۔

کیٹاگری میں : Sports

اپنا تبصرہ بھیجیں